Do you want to remove all your recent searches?

All recent searches will be deleted

کچھ اشعار - قتیل شفائی

3 years ago52 views

ساری بستی میں یہ جادو نظر آئے مجھ کو
جو دریچہ بھی کھلے تو نظر آئے مجھ کو


صدیوں کا رت جگا میری راتوں میں آ گیا
میں اک حسین شخص کی باتوں میں آ گیا

جب تصور میرا چپکے سے تجھے چھو آئے
دیر تک اپنے بدن سے تیری خوشبو آئے

گستاخ ہواؤں کی شکایت نہ کیا کر
اُڑ جائے دوپٹہ تو دھنک اوڑھ لیا کر

تم پوچھو اور میں نہ بتاوں ایسے تو حالات نہیں
ایک ذرا سا دل ٹوٹا ہے اور تو کوئی بات نہیں

رات کے سناٹے میں ہم نے کیا کیا دھوکے کھائے ہیں
اپنا ہی جب دل دھڑکا تو ہم سمجھے وہ آئے ہیں

Report this video

Select an issue

Embed the video

کچھ اشعار - قتیل شفائی
Autoplay
<iframe frameborder="0" width="480" height="270" src="https://www.dailymotion.com/embed/video/x3g0b11" allowfullscreen allow="autoplay"></iframe>
Add the video to your site with the embed code above

Report this video

Select an issue

Embed the video

کچھ اشعار - قتیل شفائی
Autoplay
<iframe frameborder="0" width="480" height="270" src="https://www.dailymotion.com/embed/video/x3g0b11" allowfullscreen allow="autoplay"></iframe>
Add the video to your site with the embed code above